مرجع عالی قدر اقای سید علی حسینی سیستانی کے دفتر کی رسمی سائٹ

فتووں کی کتابیں » توضیح المسائل جامع

چھٹا مقدمہ: مکان نماز گزار کے شرائط کی رعایت ← → نماز گزار کے لباس کے بعض احکام

نماز گزار کے لباس کے مستحبات اور مکروہات

مسئلہ 1020: بعض مجتہدین کرام قدس اللہ اَسرارُھُم نے نماز گزار کے لباس میں چند چیزوں کو مستحب جانا ہے من جملہ:

1
۔ مرد عمّامہ کوتحت الحنک کے ساتھ پہنے۔

2
۔ مرد عبا اور عورت چادر اوڑھے۔

3
۔ سفید لباس پہنے۔

4
۔ پاکیزہ ترین لباس پہنے۔

5
۔ بدن کو چند لباس سے چھپائے۔

6
۔ خوشبو استعمال کرے۔

7
۔ عقیق کی انگوٹھی پہنے۔

8
۔ عورت نماز میں پیر کے ٹخنے سے نیچے اور نابالغ بچی نماز میں اپنے سر کو چھپائے۔

مسئلہ 1021: بعض مجتہدین عظام قدس اللہ اسرارھم نے نماز گزار کے لباس میں بعض چیزوں کو مکروہ شمار کیا ہے من جملہ:

1
۔ سیاہ لباس کا پہننا۔ [110]

2
۔ گندا لباس پہننا۔

3
۔ تنگ لباس پہننا کہ جس میں تنگ موزے کا پہننا بھی ہے جو پیر کو فشار دے۔

4
۔ شرابی کا لباس پہننا کہ جس کے نجس ہونے کے بارے میں معلوم نہیں ہے ۔

5
۔ ایسے شخص کا لباس پہننا جو نجاست سے پرہیز نہیں کرتا بشرطیکہ اس کے نجس ہونے کے بارے میں معلوم نہ ہو۔

6
۔ ایسا لباس پہننا جس پر تصویر بنی ہوئی ہو۔

7
۔ ایسی انگوٹھی پہننا جس پر چہرے کی تصویر بنی ہوئی ہو۔

8
۔ لباس کے بٹن کا کھلا ہونا۔

9
۔ ان چھوٹے لباس کا نجس ہونا جو شرم گاہ کو چھپانے کی صلاحیت نہیں رکھتے۔

[110] عبا، چادر، سادات کا عمامہ اور وہ مقامات جو تعظیمِ شعائر شمار ہوتے ہیں جیسے عزاداری امام حسین علیہ السلام وہ استثنا ہو جائیں گے۔
چھٹا مقدمہ: مکان نماز گزار کے شرائط کی رعایت ← → نماز گزار کے لباس کے بعض احکام
العربية فارسی اردو English Azərbaycan Türkçe Français