مرجع عالی قدر اقای سید علی حسینی سیستانی کے دفتر کی رسمی سائٹ

فتووں کی کتابیں » توضیح المسائل جامع

نماز گزار کے لباس کے بعض احکام ← → نماز گزار کے لباس کی مخصوص شرطیں

دوسری مخصوص شرط: اگر نماز گزار مرد ہے تو اس کا لباس خالص ریشم کا نہ ہو

مسئلہ 1005: نمازگزار مرد کا وہ لباس جو اس کی شرم گاہ کو چھپا سکتا ہے خالص ریشم سے نہ ہو اور نماز کے علاوہ بھی مردوں کے لیے اس کا پہننا حرام ہے۔

مسئلہ 1006: اگر لباس کا پورا استر یا کچھ مقدار خالص ریشم کا ہو تو مرد کے لیے اس کا پہننا حرام اور اس میں نماز باطل ہے۔

مسئلہ 1007: اگر مرد کا چھوٹا لباس جو شرم گاہ کو چھپانے کی قابلیت نہ رکھتا ہو جیسے ٹوپی یا گول ٹوپی یا بیلٹ (Belt) ریشم کا ہو نماز صحیح ہے گرچہ احتیاط مستحب ہے کہ نماز میں اسے نہ پہنے۔

مسئلہ 1008: لباس کے کنارے کو اگر ریشم سے سجایا ہو تو حرج نہیں لیکن احتیاط مستحب ہے کہ اس کی چوڑائی چار انگل سے زیادہ نہ ہو اور اسی طرح لباس کا بٹن اور اس کا دھاگا یا ڈوری جو لباس میں لگائے جاتے ہیں اگر ریشم کے ہوں تو کوئی حرج نہیں گرچہ زیادہ ہی کیوں نہ ہو۔

مسئلہ 1009: جس لباس کے بارے میں نہیں معلوم کہ خالص ریشم سے ہے یا کسی اور چیز سے تو اس کا پہننا اور اس میں نماز پڑھنا جائز ہے۔

مسئلہ 1010: اگر ریشمی رومال اور اسی طرح کی چیز نماز گزار مرد کے جیب میں ہو تو حرج نہیں ہے اور نماز کو باطل نہیں کرے گا۔

مسئلہ 1011: عورت کے لیے ریشمی لباس پہننا نماز اور غیر نماز میں حرج نہیں رکھتا اور اسی طرح نا بالغ بچے کا ولی اسے ریشمی لباس پہنا سکتا ہے اور نابالغ بچے کی نماز ریشمی لباس میں صحیح ہے۔
نماز گزار کے لباس کے بعض احکام ← → نماز گزار کے لباس کی مخصوص شرطیں
العربية فارسی اردو English Azərbaycan Türkçe Français